دنیا بھر میں تقریبا 2.5 بلین صارفین کے ساتھ ، واٹس ایپ دنیا کا سب سے مقبول میسجنگ ایپ ہے۔

تاہم ، چونکہ اسے 2014 میں فیس بک نے 19 بلین ڈالر میں حاصل کیا تھا ، لہذا اسے صارفین کے ڈیٹا کو ہینڈل کرنے کے طریقے کی وجہ سے تنقید کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

واٹس ایپ کی رازداری کی پالیسی کے ایک پرانے ورژن میں کہا گیا ہے: “آپ کی رازداری کا احترام ہمارے ڈی این اے شامل ہے۔ چونکہ ہم نے واٹس ایپ کا آغاز کیا ہے ، لہذا ہم نے نجی خدمات کے اصولوں کو مدنظر رکھتے ہوئے اپنی رازداری اور پالیسی تیار کی ہے”۔

واٹس ایپ کی پالیسی میں تبدیلی نے رازداری کے خدشات میں اضافہ کرتے ہوئے صارفین میں خدشات کا طوفان برپا کردیا ہے کیونکہ ایپ نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپنے اعداد و شمار کو پیرنٹ کمپنی فیس بک کے ساتھ شیئر کرے گی۔

تازہ ترین اپڈیٹ کے تحت ، کاروباری اکاوئنٹ رکھنے والے صارفین کو یہ حق حاصل ہوگا کہ وہ اپنے پیغامات اور سیٹنگز کو فیس بک پر محفوظ کر سکتے ہیں اور واٹس ایپ تمام صارفین کا ڈیٹا فیس بک اور انسٹاگرام کو مہیا کر سکتا ہے جو کسی بھی اشتہاری مہم میں استعمال کیا جا سکے گا۔

سروس کی شرائط اور رازداری کی طے شدہ پالیسی کا یورپی خطے سے کوئی تعلق نہیں اور اس سے یورپی باشندوں کا ڈیٹا متاثر نہیں ہوگا۔ واٹس ایپ ترجمان نے کہا، کسی بھی شک سے بچنے کے لئے یہ بات واضح کی جا رہی ہے کہ آج سے پہلے بھی واٹس ایپ نے کبھی یورپی صارفین کا ڈیٹا استعمال یا شئیر نہیں کیا۔

اطلاعات میں بتایا گیا ہے کہ تازہ ترین رازداری کی پالیسی اور خدمات کی شرائط 8 فروری سے نافذ العمل ہوں گی۔

نئی پالیسی کے اعلان کے بعد ، واٹس ایپ صارفین نے ڈیٹا شیئرنگ معاہدے پر اپنے غم و غصے کا اظہار کرنے ٹویٹر پر جاکر میسجنگ ایپ کو چھوڑنے کا مطالبہ کیا۔

ّواٹس ایپ کون کونسی معلومات جمع کرتا ہے؟

جمع کردہ ڈیٹا میں “بیٹری لیول ، سگنل کی طاقت ، ایپ ورژن ، براؤزر کی معلومات ، موبائل نیٹ ورک ، کنکشن کی معلومات (فون نمبر ، موبائل آپریٹر یا آئی ایس پی بھی شامل ہے) ، زبان اور ٹائم زون، آئی پی ایڈریس، ڈیوائس آپریشن کی معلومات، میسجز، کال کا ڈیٹا اور صارف کی تمام شناخت شامل ہیں.”

نئی پالیسی کا یہ بھی مطلب ہے کہ صارف کسی موبائل سے صرف ایپ کو ختم کرنے سے واٹس ایپ صارف کے نجی ڈیٹا کو کمپنی کے پاس محفوظ رکھنے سے نہیں روک سکے گا۔ واٹس ایپ کو مکمل ختم کرنے کے لیے اس میں موجود “DELETE ACCOUNT” کا استعمال کرنا پڑے گا اور اس کے استعمال کے باواجود کمپنی صارف کا ڈیٹا اپنے پاس 30 دن کے لیے محفوظ کرنے کا حق رکھتی ہے۔

Share: