کیا آپ اپنے وائی فائی کی کم رینج سے پریشان ہیں؟ یہ بات بہت یقینی سے کہی جا سکتی ہے کہ آپ کے گھر میں موجود وائی فائی راؤٹر گھر کے ہر کونے تک بآسانی سگنل نہیں پہنچا سکتا اور آپکو اس کی رینج بڑھانے کے لیے مختلف طریقہ اپنانے پڑتے ہیں۔ اب آپ کا یہ مسلئہ جلد ختم ہو جائے گا کیونکہ عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق فیڈرل کمیونی کیشنز کمیشن نے وائی فائی کے نئے بینڈ 6GHz اسپیکٹرم کا ایک پلاٹ کھولنے کے حق میں ووٹ دے دیا ہے جو صارفین کے روٹرز کو 2.4GHz اور 5GHz بینڈ پر نشر کرنے کے قابل بنا دے گا۔

یہ بھی پڑھیں:  لاک ڈاؤن میں گھر سے کام کرتے ہوئے انٹرنیٹ کیسے بہتر کریں؟

جب پہلی بار وائی فائی تیار کی گئی تھی ، تو اس نے 2.4 گیگا ہرٹز کی حد میں اسپیکٹرم استعمال کیا۔ شروع سے ہی ہوا میں ہجوم تھا۔ 2.4 گیگا ہرٹز بہت سی دیگر ڈیوائس اقسام کے ذریعہ استعمال کیا جاتا تھا ، بشمول کارڈلیس فونز ، بلوٹوتھ ڈیوائسز ، اور کچھ آئی او ٹی پروٹوکول۔

نیا اسپیکٹرم راؤٹرز اور دیگر آلات کے لئے پیش کردہ جگہ کی مقدار کو چار گنا بڑھاتا ہے، جس کا مطلب ہے کہ زیادہ بینڈوتھ دستیاب ہے اور وہ بھی کسی مداخلت کے بغیر۔ توقع کی جا رہی ہے کہ رواں برس کے آخر تک وائی فائی 6GHz مارکیٹ میں “Wi-Fi 6E” کے نام سے فروخت کے لیے موجود ہوگا۔

خوشی کی بات یہ ہے کہ لانچنگ کے پہلے اس بات کی تصدیق کر لی گئی ہے کہ 6GHz اسپیکٹرم گھر میں موجود بچوں اور بڑوں کے لیے نقصاندہ نہیں ہوگا۔

اس موقع پر مارکیٹنگ لیڈر کیون رابنسن نے کہا کہ نئے بینڈ اسپکٹرم کے آنے سے جدید ترین آلات پر تیز تر اور قابل اعتماد کنکشن کی توقع کی جاسکتی ہے۔ 20 برسوں کے بعد وائی فائی اسپیکٹرم کے بارے میں تاریخ کا یہ سب سے اہم فیصلہ ہے۔

واضح رہے کہ وائی فائی ایئر ویوز کو نشر کرنے کے ذریعہ کام کرتا ہے اور اس وقت دو بینڈز 2.4GHz اور 5GHz موجود ہیں اور اب 1989 کے بعد پہلی بار تیسرے بینڈ 6 GHz کی اجازت دیدی گئی ہے۔

Share: