ایک راز کی بات سننا چاہیں گے؟ اب آپ 30 میٹر دور رہ کر کسی کی بھی کی جانے والی گفتگو سن سکتے ہیں۔ جی ہاں، اب آپ اس جادوئی الہ کی مدد سے 30 میٹر کی دوری سے صاف آواز سن سکتے ہیں۔ یہ ابھی ایک تجرباتی آلہ ہے جو دور سے ٹھیک آواز پہچان کر سنوا سکتا ہے۔
یہ ایک نئی ٹیکنالوجی ہے جو دور فاصلہ سے آواز کے سگنل پہچاننے کے لیے ایک بیم استعمال کرتی ہے۔ماہرین کہتے ہیں کہ یہ چھوٹا سا الہ ہے جو بغیر کسی مداخلت کے دور کھڑے انسان کی آواز پہچان کر سنوا سکتا ہے۔

موجودہ پروٹوٹائپ آلات کے لیے ابھی موزوں نہیں ہے مگر اس کو بنانے والے سائنسدان ایزر مارزو کا کہنا ہے کہ یہ آلہ آنے والے واقت میں بہترین ثابت ہوگا اور یہ فوجیوں میں خفیہ بات چیت کرنے کے لیے فائدہ مند ہوگا۔ یہ آلہ دراصل الٹراساؤنڈ ٹیکنالوجی پر کام کرتا ہے۔ الٹراساؤنڈ کی ایک خادیت یہ بھی ہے کہ یہ پانی میں بھی سفر کر سکتی ہیں اور ان کی مدد سے غوطہ خور سمندر میں بات چیت کرتے ہیں۔
اس آلہ کی مدد سے سنی جانے والی آواز بہت صاف اور حیران کن طور پر پرسکون ہوتی ہے بلکل ایسے جیسے کوئی دوسرا آپ کے کان میں سرگوشی کر رہا ہو۔ یہ آلہ شور میں بھی ٹھیک سے آواز جانچ کر اور حیران کن طور پر بہت سے لوگوں میں سے بھی ٹھیک آواز جانچ کر سنوا سکتا ہے۔

مارزو نے سب سے پہلے کچھ الفاظ پر تجربات کیئے جیسا کہ اس نے “ہاں” “نا” “پیچھے” “روکو” جیسے الفاظ کا انتخاب کیا۔ حیران کن طور پر آلہ نے سب الفاظ کی پہچان ٹھیک کی۔

الفاظ کی پہچان والے آلہ کو جب دو اسپیکرز کے ساتھ جوڑا گیا اور ان کو چھ ڈگری زاویہ پر رکھ کر چلایا گیا تو ان سے پیدا ہونے والی آواز الٹراسونک لہروں کی شکل میں نکلی جسے صرف اس انسان نے سنا جو ان لہروں کے راستہ میں کھڑا تھا۔

اس ٹیکنالوجی کے بعد کے ورژن میں خاص مقاصد کے لیے زیادہ الفاظ کی پہچان اور اس آلہ کے سائز کو مزید بہتر بنایا جا سکتا ہے۔ مگر ابھی کے لیے یہ آلہ دور رہ کر کسی دوست کی گقتگو کو سننے اور مزہ کرنے کے لیے بہترین چیز ہے۔

Share: