کمپنی کے پارکنگ بریک میں خرابی کی مرمت کے لئے 53،000 ماڈل S اور ماڈل X گاڑیوں کے لئے ایک رضاکارانہ عالمی یادآوری پیپر جاری کیا ہے.
بی بی سی کے مطابق کار سازوں کی اس بات کی شکایت کے بعد کمپنی نے 53،000 میں سے صرف 2 فیصد گاڑیاں لی اور پارکنگ بریک کی تحقیقات کی گئ۔
متاثرہ گاڑیاں فروری اور اکتوبر 2016 کے درمیان کی مدت میں تیار کی گئ ہیں۔

ٹیسلا نے پارکنگ بریک سے ہونے والے حادثات یا چوٹوں کے بارے میں کوئ تفصیلاتی بیان جاری نہیں کیا. ایک برقی کار ساز کی طرف سے سرکاری بیان یہ مسئلہ کچھ اس طرح بیان کیا “یہ مسئلہ اک چھوٹے سے گیئر کی وجہ سے پیدا ہوا ہے جو کہ کسی تیسرے فریق نے بنایا تھا.

ٹیسلا نے حال ہی میں دریافت کیا کہ اْن کی گاڑیوں کے مخصوص ماڈل S اور ماڈل X میں برقی پارکنگ بریک میں مینوفیکچرنگ مسئلہ آ رہا ہے جس کی وجہ سے گاڑیوں میں پارکنگ بریک ختم کرنا مشکل ہوتا ہے. کمپنی نے مزید کہا “ہم اس مسئلے کو کبھی نطر انداز نہیں کر سکتے اور نہ ہی اپنے صارفین کی حفاظت پر سمجھوتا کر سکتے ہیں، اور ہم نے اس سے متعلق ایک بھی حادثے یا چوٹ کو نہیں دیکھا ہے. اگرچہ، حد سے زیادہ احتیاط اور اپنے صارفین کی حفاظت کے لئے ہم ان حصوں کو تبدیل کرنے جا رہے ہیں.”

متاثرہ گاڑیوں کے مالکان توقع کر رہے ہیں کہ جلد ہی یادآوری نوٹس بزریعہ ای میل وصول کریں گے، لیکن ٹیسلا نے مزید کہا کہ “آپ ایسی گاڑی کے باقاعدہ استعمال جاری رکھنے کے لئے محفوظ ہیں”. ایسی گاڑی جس میں مسئلہ ہو اْس کے مالک براہ راست کمپنی کواپنی گاڑی کے معاملے اس ServiceHelpNA@tesla.com  ای میل پر بتا سکتے ہیں.

دلچسپ بات یہ ہے، کمپنی نے اس مختصر وقت میں امریکہ میں سب سے قیمتی کار ساز ادارے بننے کے لئے کوشش شروع کی اور ساتھ ہی کمپنی کو اس مسئلے کا سامنا کرنا پڑ گیا.

دریں اثنا، ٹیسلا کے سی ای او ایلن مسک نے اعلان کیا کہ وہ جلد اک نیئ کمپنی شروع کریں گے جو2020 تک انسانوں کو سائبورگ میں تبدیل کر دے گی.

Share: