اگر آپ روزانہ صبح ایک گلاس نیم گرم پانی میں لیموں کا رس نچوڑ کر پینے کی عادت ڈال لیں تو اس سے آپ کی صحت پر حیرت انگیز اثرات مرتب ہوں گے۔ اچھی صحت کے لیے یہ تدبیر صدیوں پرانی اور آزمودہ ہے جس کی افادیت کے جدید طبی ماہرین بھی قائل ہوگئے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ لیموں کے رس میں وٹامن بی، وٹامن سی، پوٹاشیم اور کاربوہائیڈریٹس کے علاوہ صحت بخش روغنیات بھی شامل ہوتے ہیں جب کہ لیموں کا رس ایک قدرتی اینٹی آکسیڈینٹ کا کام بھی کرتا ہے۔

نیم گرم پانی میں لیموں نچوڑ کر روزانہ نہار منہ پینے کے چند فوائد حسبِ ذیل ہیں:

بیماریوں سے بہتر بچاؤ: لیموں پانی کا روزانہ استعمال ہمارے جسم کے لمفی افعال (لمفیٹک فنکشنز) کو بہتر بناتا ہے، یعنی یہ ہمارے جسم میں بیماریوں کے خلاف لڑنے والے قدرتی دفاعی نظام (امیون سسٹم) کو زیادہ مضبوط اور اس قابل بناتا ہے کہ وہ بیماری پیدا کرنے والے جراثیم، وائرسوں اور مادّوں کو پہچان کر تیزی سے ان کا قلع قمع کر سکے۔

تیزابیت کا خاتمہ: معدے کی جلن یا تیزابیت ختم کرنے میں لیموں کا رس اکسیر کی حیثیت رکھتا ہے اور نہار منہ نیم گرم پانی کے ساتھ اس کی افادیت دوچند ہوجاتی ہے۔

ورزش کے بعد پٹھوں میں درد سے نجات: بعض اوقات ورزش کے بعد پٹھوں میں درد ہونے لگتا ہے لیکن نہار منہ نیم گرم لیموں پانی پینے سے یہ درد بھی ختم ہو جاتا ہے۔

مثانے کی تکلیف: نہار منہ نیم گرم پانی میں لیموں نچوڑ کر پینے کے علاوہ اگر آپ کھانے کے ساتھ بھی لیموں پانی پیتے رہیں تو مثانے کی تکلیف کسی دوا کے بغیر ہی ختم ہو جائے گی۔

سردی اور زکام: لیموں کے رس میں وٹامن سی وافر موجود ہوتا ہے جو قدرتی اینٹی آکسیڈینٹ کا کام بھی کرتا ہے جب کہ اس میں جراثیم کش خصوصیات بھی پائی جاتی ہیں۔ اسی وجہ سے زکام اور سردی کے علاج میں بھی نیم گرم پانی کے ساتھ لیموں کے رس کا استعمال بے حد فائدہ مند رہتا ہے۔

 شوگر میں بھی مفید: دوسرے رس دار پھلوں کی طرح لیموں میں بھی ’’پیکٹن‘‘ نامی ایک مادّہ پایا جاتا ہے جو بھوک کے احساس کو قابو میں رکھتا ہے جب کہ دوسری طرف لیموں پانی کا استعمال ہاضمے کو بہتر بنانے کے علاوہ پتّے سے صفراوی رس (بائل جوس) کے اخراج میں بھی اضافہ کرتا ہے۔ اس طرح نہ صرف جسم میں چکنائی جمع ہونے نہیں پاتی بلکہ خون میں شکر کی مقدار بھی کنٹرول میں رہتی ہے جو ذیابیطس کے مریضوں کےلیے نیک شگون ہے۔

صحت مند ناخن: نیم گرم لیموں پانی کے روزانہ صبح سویرے استعمال سے نہ صرف ناخنوں کی نشوونما بہتر ہوتی ہے اور وہ سیدھے بڑھتے ہیں بلکہ ناخنوں کی جڑوں میں موجود سفید نشانات بھی کم ہو جاتے ہیں۔

 کیلوں اور جھائیوں کا علاج: جلد کی اندرونی چکنائی اور تیزابیت کی وجہ سے کھال پر کیلیں اور جھائیاں نمودار ہو جاتی ہیں جنہیں ختم کرنے کے لیے جلد پر لیموں رگڑنے کا گھریلو ٹوٹکا بہت عام ہے۔ البتہ اگر اسی کے ساتھ نیم گرم لیموں پانی پینے کا معمول برقرار رکھا جائے تو اس ٹوٹکے کی ضرورت بھی بہت کم رہ جاتی ہے۔

غذائی امراض سے تحفظ: دورانِ سفر لیموں پانی کا استعمال ہمیں غذا سے پیدا ہونے والی بیماریوں سے بھی بچاتا ہے۔

ہڈیوں اور جوڑوں کی اینٹھن: پٹھوں کی طرح جوڑوں اور ہڈیوں پر بھی لیموں پانی کے مفید اثرات پڑتے ہیں کیونکہ اس میں شامل معدنیات ہڈیوں میں مضبوطی کے ساتھ ساتھ جوڑوں پر حرکت میں سہولت پیدا کرتی ہیں۔

گردے کی پتھری: لیموں کے رس میں شامل پوٹاشیم گردے کی پتھری بننے سے روکتا ہے اور اس کے اجزاء کو سٹرک ایسڈ میں حل کر کے پیشاب کے راستے جسم سے نکال باہر کر دیتا ہے۔

گٹھیا، جوڑوں میں سوجن اور درد: لیموں پانی کے استعمال سے جوڑوں پر یورک ایسڈ جمع ہونے کی شرح کم ہو جاتی ہے جس کا براہِ راست فائدہ اُن لوگوں کو ہوتا ہے جن کے جوڑوں میں تکلیف رہتی ہے یا پھر وہ گٹھیا کے مریض ہوں۔

Share: