2036 تک علی بابا دنیا کی پانچویں بڑی معیشت ہوگی

“2036 تک علی بابا دنیا کی پانچویں بڑی معیشت ہوگی” ایسا کہنا ہے علی بابا کے بانی جیک ما کا، جنہوں نے راتوں رات 2.8 ارب ڈالر کمائے۔ 

ہانگزہو، چین میں علی بابا کے ہیڈ کوارٹر میں سرمایہ کاروں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر کمپنی 2 ارب صارفین کی خدمت کر سکتی ہے، جو دنیا کی آبادی کا ایک تہائی ہے۔اگر کمپنی 10 کروڑ ملازمت کے مواقع پیدا کر سکتی ہے،جو کئی حکومتوں سے زیادہ ہے۔ اگر ایک کمپنی ایک کروڑ کاروباری اداروں کے منافع کا باعث ہے تو یہ معیشت کہلائے گی۔ دنیا کی پانچویں بڑی معیشت بننے کے لیے علی بابا کو جرمنی، برطانیہ، فرانس اور بھارت جیسی معیشتوں سے مقابلہ کرنا پڑے گا ،جو آسان کام نہیں۔

یاد رئے کہ اس وقت علی بابا دنیا کی 22 ویں بڑی معیشت ہے جس کا نمبر ارجنٹائن کے بعد ہے۔ کمپنی کا کہنا ہے کہ 2020 تک کمپنی کی تجارت کا حجم 1 ٹریلین ہو جائے گا جو انڈونیشیا سے بھی آگے ہوگا۔

یہاں ایک اور بات قابل ذکر ہے کہ گزشتہ دنوں علی بابا کے بانی نے ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا تھا کہ علی بابا کا قیام اُن کی زندگی کی سب سے بڑی غلطی ہے۔

Share: