ہیکنگ سے کون واقف نہیں؟ آج کے دور میں ہیکنگ سائبر سائنس کی بڑی لعنت سمجھی جا رہی ہے۔ ہیکنگ صرف انٹرنیٹ سے جڑے کمپیوٹرز تک ہی نہیں محدود رہی بلکہ اس نے ایسی ڈوائسس کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے کہ ہم سوچ بھی نہیں سکتے۔ اس کی وجہ سے افراد اور اداروں کا بھی بہت نقصان بھی ہورہا ہے اورا نہیں نقصانات کو کم یا ختم کرنے کی غرض سے کئی وائی فائی کمپنیوں نے حفاظتی گیجٹ اور راوٹر بھی تیار کئے ہیں۔

ٹویٹر میں 280 حروف ایکٹیو کرنے کا طریقہ

یہ گیجٹ ابھی کچھ وقت سے زیر استعمال تھے مگر اب ماہرین کا کہنا ہے کہ نئے شواہد سے پتہ چلتا ہے کہ گھر میں استعمال ہونے والے مختلف بلکہ تمام راﺅٹرز جو کہ WPA2 کی بنیاد پر حواطت کرتے ہیں، آسانی سے ہیک ہوسکتے ہیں کیونکہ انکی حفاظت کیلئے وائی فائی میں جو نظام پیش کیا گیا ہے اس میں بڑی خامیاں ہیں۔ ماہرین نے لائیو ایک پریس شو میں تجربے کے طور پر راﺅٹرز کو ہیکنگ کر کے دکھا دیا۔ مظاہرے کے دوران یہ بھی نظر آتا رہا کہ کس طرح غیر محفوظ پیغامات اور ڈیٹا اسکرین پر نظر آتے ہیں اور غائب ہوجاتے ہیں مگر اس مختصر سے لمحے میں ہیکرز اپنا کام دکھا سکتے ہیں۔

ہیکنگ

ماہرین کا کہنا ہے کہ WPA2 نامی راﺅٹر غیر محفوظ ثابت ہوگئے ہیں کیونکہ انکی طبعی کارکردگی تسلی بخش نہیں اسلئے ایسے راﺅٹر استعمال کرنے والوں کو دیگر ڈوائسسز کی جانب دیکھنا چاہئے۔

Share: