امریکی کمپنی نے ایک ایسی ڈیوائس تیار کی ہے جسے بلیو ٹوتھ ٹرانسمیٹرکہا جاتا ہے یہ پہلا بیٹری کے بغیر چلنے والا ٹرانسمیٹر ہے، یہ ٹرانسمیٹر ہوا میں موجود برقناطیسی ،ریڈیائی امواج سے توانائی خود میں جذب کرتا ہے اور بغیر بیٹری کے توانائی پیدا کر کے اسمارٹ فون تک بھیجتا ہے۔

زرائع کے مطابق نیو یارک میں واقع ویلینٹ کمپنی نے اس کیلئے پانچ کروڑ میں سے تین کروڑ ڈالر کی فنڈنگ جمع کر لی ہے، اس اسٹیکر نما ڈیوائس میں آرایم پروسیسر نصب ہے جو اپنے آس پاس سے توانائی جمع کر کے خود کو چلاتا ہے۔اس کے اندر ایک چھوٹی سی چپ پر انٹینا لگا ہواہے اور اسے کسی بھی کاغذ یا پلاسٹک کے ٹکڑے پر نصب کیا جاسکتا ہے۔یہ بلیو ٹوتھ اسٹیکر کس بھی ڈیوائس یا اسمارٹ فون سے رابطہ کر سکتا ہے۔

اس بلیو ٹوتھ اسٹیکرکو ری سائیکل ریڈی ایشن آلات بھی بولا جاتا ہے،ڈاک ٹکٹ جتنا چھوٹا اور کسی بھی بیٹری کے بغیر مسلسل کام کرتا ہے۔اس کی وجہ سے ہر جگہ بر موقع پر موجود انٹرنیٹ آلات کو ممکن بنا کر تمام اشیاء کو باہم جوڑا جا سکتا ہے۔

Share: