گوگل نے اپنے نئے آپریٹنگ سسٹم کے نام کا اعلان اینڈرائیڈ او مارچ میں ہی کر دیا تھا مگر سوال یہ تھا کہ اب او سے ایسے کونسے میٹھے پکوان کا نام ہوگا جسے گوگل اپنائے گا۔ اس بارے میں مختلف قیاس آراِئیاں بھی ہوتی رہی مگر اب گوگل نے اپنے نئے آپریٹنگ سسٹم کا نام متعارف کروا دیا ہے۔ نیا آپریٹنگ سسٹم اینڈرائیڈ اوریو نے نام سے جانا جائے گا۔ کیونکہ انگلش لفظ او سے کچھ زیادہ میٹھے پکوان موجود نہیں جبکہ اوریو دنیا بھر میں شناخت رکھنے والا بسکٹ ہے۔ اینڈرائیڈ کے اس نئے ورژن کا اعلان نیویارک میں ایک ایونٹ کے دوران کیا گیا۔

android orio

ہمیشہ کی طرح گوگل کا یہ نیا اینڈرائیڈ ورژن سب سے پہلے گوگل کے اپنے موبائیلز میں دستیاب ہوگا جس مین گوگل نیکسس اور گوگل پکسل کی ڈواِسسز شامل ہیں۔ ابھی اس نئے اینڈرائیڈ ورژن کے لانچ ہونے کی تاریخ کا اعلان نہیں کیا گیا مگر اس کو کئی مہینوں سے آزمایا جا رہا ہے تا کہ ڈویلپرز اپنی ایپس کو جلد از جلد اپ ڈیٹ کر سکیں۔

یہ پہلی بار نہیں کہ گوگل نے جب بھی اپنا نیا اینڈرائیڈ ورژن متعارف کروایا ہے تو کسی کمپنی سے شراکت داری نہ کی ہو، جیسا کہ اینڈرائیڈ کٹ کیٹ میں بھی گوگل نے 2013 میں کٹ کیٹ ٹیم کے ساتھ کام کیا تھا۔

نئے او-ایس میں وہ سب اپ ڈیٹس بھی شامل ہونگی جنہیں بےحد اہم سمجھا جاتا ہے جیسا کہ بیٹری اور سکیورٹی اپ ڈیٹس وغیرہ۔ دوسرے فیچرز میں ایپس آئیکون میں نوٹیفکیشن ڈوٹس، پکچر ان پکچر موڈ، اینڈرائیڈ انسٹنٹ ایپ کمپیلیبیٹی اور آٹو فل ٹو شامل ہیں جو کہ پاس ورڈز اور دیگر ذاتی معلومات کے جلد اور محفوظ اندراج میں مددگار ثابت ہونگے۔

بیٹری کی میعاد بڑھانے کے لیے بیک گراﺅنڈ ایپس کو بھی محدود کردیا جائے گا تاکہ وہ ڈیوائس کی بیٹری کو زیادہ استعمال نہ کرسکیں۔

Share: